103

بھارتی ایٹمی ریکٹر دھواں دھواں! اگلا مورچہ ۔ عمر چوہدری

5 / 100

بھارتی ایٹمی ریکٹر دھواں دھواں!
اگلا مورچہ ۔ عمر چوہدری

پوکھران (راجستھان)کے بھارتی خفیہ ایٹمی یورینیم ریکٹر پلانٹ سے چند روز قبل اُٹھنے والے سیاہ دھوئیں ،دھماکوں اور بڑی تعداد میں فوجیوں سمیت کئی افراد کے جہنم واصل ہونے کی اطلاعات نے ”بھارتی سرکار“ کو کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں چھوڑا ۔
جی ہاں ! بھارتی میجر جنرل رام داس کالیا اپنی ”حسن کارکردگی“ کی دھاک بیٹھانے کے لئے ”انڈیا ٹائمز“ٹی وی کی ٹیم کے ساتھ یہاں موجود تھا ۔اور اپنی نوکری سیدھی کرنے اور اعلیٰ حکام کی نظر میں ”بڑے پن“کا مظاہرہ کرنے کےلئے کرنل وجے کماریا،کرنل اشانت کمار پلویر،میجر ہر چرن سنگھ ڈھلوںکو بھی ہمراہ لے آیا تھا اور یہاں نصب ٹائم بم کی ’کوریج‘ کرانا چاہتا تھا ۔بم پکڑے جانے کی اطلاع پر موصوف جنرل اپنی ”شاندار “پرفارمنس دنیا بھر کو دکھانے کے لئے بے تاب تھا کہ اچانک دیگر لگائے گئے بموں نے ’جنرل رام داس ‘کا خواب چکنا چور کر کے انہیں چتا کے سپرد کر دیا ۔
ایٹمی ریکٹر کے بھسم ہونے کے فوراً بعد لائیو کوریج کو روک کر دیگر خبر رساں اداروں کو بھی خبر ”جاری“ نہ کرنے کی ہدایات دی گئیں ،ایٹمی بجلی گھر کے 80فی صد حصے کو بھی بند کر دیا گیا بڑی تعداد میں بھارتی فوجی ،پولیس اور دیگر اداروں نے راجستھان کے داخلی و خارجی راستوں پر ناکہ بندی کر کے کرفیو کا سماں پیدا کر دیا ۔پکڑ دھکڑ اور تلاشیو ں کا وسیع سلسلہ جاری ہے ۔دلچسپ امر یہ ہے کہ دنیا بھر میں اپنی ”مہارت“ ،”کارکردگی“ اور ”پیشہ وارانہ “صلاحیتوں کا ڈھنڈورا پیٹنے والی ”را“اور اس کی دست راست ایجنسیاں تا حال ’ملزمان‘ تک پہنچنے میں ناکام ہیں جبکہ انہیں شدت سے ان 6 چرواہوں کی تلاش ہے جو گزشتہ کئی روز سے اس علاقے میں جانور چراتے پھرتے دکھائی دے رہے تھے ۔خفیہ پولیس دیہاتوں، بس اڈوں ،ریلوے اسٹیشنوں پر سونگھتی پھر رہی ہے لیکن کام دکھانے والے چھو منتر ہو چکے ہیں!۔
اگر بھارتی سیاہ تاریخ کا جائزہ لیا جائے تو اس کے حکمرانوں نے ہمیشہ اقلیتوں کا گلا گھونٹنے ،مکروہ اقدامات اور ناپسندیدہ ”اصلاحات“ کے علاوہ کچھ نہیں کیا ۔اپنے ہمسایوں سے اُلجھنا ،خواتین پر جنسی تشدد،ڈاکے ،چوریاں ،وارداتیں،بھتہ خوری بھارتی اضلاع میں اس قدر عام ہے کہ ہر شخص خود کو غیر محفوظ سمجھتا ہے ۔ایسے مشکل حالات میں مسلمانوں اور سکھوں نے اقلیت میں ہونے کے باوجود ہمیشہ اپنی ”شناخت “اور’ وجود‘ کے لئے جدوجہد کی ہے اسی لئے نام نہاد ’بھارت‘مسلمانوں اور سکھوں سے خوف زدہ ہو کر ان کے خلاف سازشیں کرتا رہتا ہے جس میں ناکامی ”بھارتی سرکار“ کا مقدر بن کر رہ گیا ہے۔
راجستھان کو بھسم اور ایک جرنیل سمیت درجنوں فوجیوں اور افراد کو جہنم واصل کرنے کے الزام میں سکھوں کی گرفتاریاں کی گئی ہیں جنہیں نامعلوم مقامات پر رکھ کر تفتیش کے نام پر بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ سکھوں کی بلا وجہ گرفتاریوں پر سکھ جتھے دار جسونت سنگھ نے سخت الفاظ میں بھارتی اداروں کی کارروائیوں کی مذمت کی ہے اور ان سکھوں کو فی الفور رہا کرنے کے مطالبہ کے ساتھ ساتھ بصورت دیگر آئندہ بھی اپنے اہداف کو ”ٹارگٹ “کرنے کی دھمکی دی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں