45

بھارت :ہزاروں بچے ماؤں سے محروم

5 / 100

جہانگیری و جہانبانی کے خبط میں مبتلا دنیا کے کئی ممالک کو پتہ چل چکا اور چل رہا ہے کہ اس کائنات کی حاکمیت صرف اور صرف قادر مطلق کے ہاتھ میں ہے ،جس کا بھیجا کھلی آنکھ سے نظر بھی نہ آنے والا کووڈ 19-نامی جرثومہ پوری دنیا کو دنوں میں اپنے خونی پنجوں میں جکڑ کرلاشوں کے انبار لگا سکتا ہے۔معاذﷲ یہ بھارت یا کسی اور پر طنز ہر گز نہیں انسان کی کم مائیگی وبے وقعتی کا اظہار و اقرار ہے اور اس کی بے بسی کا نوحہ بھی۔بھارت اس وقت دنیا میںوبا سے سب سے زیادہ متاثر ہےاور دنیا کو اس کی مدد کے لئے آگے آناچاہئے کہ اس وبا کے ہاتھوں کئی انسانی المیے بھی جنم لے رہے ہیں مثلاًبھارت میں بچوں کے حقوق کی ایک تنظیم کو پتا چلا کہ چھ اور آٹھ سال کی عمر کے دو لڑکوں کے والدین کووڈ-19 کی وجہ سے شدید بیمار ہیں اوریہ بچے کئی دن سے بھوکے ہیں اور ایسے بچوں کی تعداد پریشان کن ہو سکتی ہے ۔خبر رساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق بچوں کے حقوق کے لیے سرگرم تنظیم نے آگاہ کیا کہ انفیکشن اور اموات میں غیر معمولی اضافے کی وجہ سے غریب آبادیوں میں بچوں کی دیکھ بھال کرنے والا کوئی نہیںکیونکہ ان کے والدین یا دوسرے رشتہ دار بہت زیادہ بیمار ہیں یا ان کا انتقال ہوگیا ہے اور ایسے بچوں کی تعداد لاکھوں نہیں تو ہزاروں میں ضرور ہوگی ۔بچوں کے حقوق کے لئے کام کرنے والی ایک این جی او نے بتایا کہ اس کی فرنٹ لائن کارکنوں نے ان بچوں کی دیکھ بھال کی جن کی مائیں کورونا کی وجہ سے گزر چکی تھیںاور وہ وہ کئی دنوں سے بھوکے تھے۔دوسری لہر کا مرکز ریاست کرناٹک کی حکومت نے کووڈ-19 کی وجہ سے یتیم ہونے والے بچوں کی شناخت کے لیے ایک عہدیدار مقرر کیا ہے تاکہ انہیں مناسب امداد کی فراہمی یقینی بنائی جا سکے۔دنیا کو انسانیت کے ناتے فوری طور پر بھارت کی امداد کو آنا ہو گا ،معاملہ بگڑا تو حالات خرابی بسیار کی طرف بھی جا سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں