39

کور کمانڈرز کانفرنس، فوج OIC وزرائے خارجہ کانفرنس اور 23 مارچ پریڈ کے پرامن انعقاد کیلئے اقدامات کرے، آرمی چیف

اسلام آباد، لاہور ( نمائندگان )آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ فوج OICوزرائے خارجہ کانفرنس اور23 مارچ کو یوم پاکستان پریڈ کے پرامن انعقاد کیلئے اقدامات کرے، دشمن قوتیں غلط معلومات اور پروپیگنڈے سے قومی یکجہتی کو نقصان پہنچا سکتی ہیں، ان کی شناخت کر کے مشترکہ ردعمل دینے کی ضرورت ہے،کور کمانڈرز کو عالمی و علاقائی صورتحال اور داخلی سیکورٹی پر بریفنگ میں بتایاگیاکہ بھارتی میزائل سے بڑی تباہی ہو سکتی تھی، متعلقہ بین الاقوامی فورمز سنجیدگی سے نوٹس لیں،بھارتی اسٹرٹیجک اثاثوں کی حفاظت اور حفاظتی پروٹوکول کو نگرانی کے تابع کرنا چاہیے،اس طرح کے خطرناک واقعات علاقائی امن کو شدید خطرات سے دوچار کر سکتے ہیں۔گزشتہ روز پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ سے جاری بیان کے مطابق 248ویں کور کمانڈرز کانفرنس آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت جی ایچ کیو میں منعقد ہوئی، کور کمانڈرز کانفرنس کو اہم عالمی اور علاقائی پیش رفت، ملکی داخلی سلامتی کی صورتحال اور مغربی بارڈر مینجمنٹ پر پیش رفت کے بارے میں جامع بریفنگ دی گئی۔ کور کمانڈرز کانفرنس نے بھارت کی جانب سے حادثہ قرار دیے گئے میزائل فائرنگ کے حالیہ واقعے پر تشویش کا اظہار کیا ہے کیونکہ اس کے نتیجے میں بڑی تباہی ہو سکتی تھی۔کانفرنس کی جانب سے اس بات پر زور دیا گیا کہ بھارت کی جانب سے غلطی کے اعتراف کے باوجود متعلقہ بین الاقوامی فورمز کو اس واقعے کا سنجیدگی سے جائزہ لینا چاہیے اور بھارتی اسٹریٹجک اثاثوں کی حفاظت اور حفاظتی پروٹوکول کو نگرانی کے تابع کرنا چاہیے۔ فورم نے کہا کہ اس طرح کے خطرناک واقعات علاقائی امن اور اسٹریٹجک استحکام کو شدید خطرات سے دوچار کر سکتے ہیں۔ فورم نے ملک کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اقدامات اٹھانے کے عزم کا اظہار بھی کیا۔ چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے دہشت گردی کے خلاف جاری کامیاب آپریشنز کو سراہا اور ہدایت کی کہ او آئی سی کونسل آف وزرائے خارجہ کے اجلاس اور یوم پاکستان پریڈ کے پرامن انعقاد کے لیے جامع حفاظتی اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ نے فارمیشنوں کی آپریشنل تیاریوں کو سراہا اور مشن پر مبنی تربیت پر زور دیا۔ بعد ازاںآرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے لاہور کا دورہ کیا اور کور آف آرٹلری میںآرٹلری گنز کی شمولیت کی تقریب میں شرکت کی۔ آرمی چیف نے مستقبل کے جنگی میدان کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے اس جدید ترین ہتھیاروں کے نظام کی شمولیت پر اطمینان کا اظہار کیا۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ ان جدید ترین بندوقوں کی رینج، جنگی میدان میں نقل و حرکت اور ان کی موثر کارکردگی سے یقینی طور پر پاک فوج کی آپریشنل تیاریوں میں اضافہ ہوگا۔ بعد ازاں آرمی چیف نے لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز (LUMS) کا دورہ کیا۔یونیورسٹی پہنچنے پر وائس چانسلر ڈاکٹر ارشاد احمد ملک اور فیکلٹی ممبران نے آرمی چیف کا استقبال کیا۔طلباء اور فیکلٹی کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے آرمی چیف نے پاکستان کی مستقبل کی قیادت کی تیاری میں لمز کے کردار اور شراکت کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو متحرک اور باصلاحیت نوجوانوں سے نوازا گیا ہے۔ ترقی کے لیے انسانی وسائل کی ترقی،اختراعات اور تکنیکی ترقی بہت ضروری ہے۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ دشمن قوتوں کی طرف سے غلط معلومات اورپروپیگنڈہ قومی ہم آہنگی کو خطرے میں ڈالتا ہے جس کا متحد ردعمل کے ذریعے اجتماعی طور پر مقابلہ کیا جانا چاہیے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں