48

پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ منصفانہ الیکشن نہیں چاہتے

پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ منصفانہ الیکشن نہیں چاہتے
لاہور(این این آئی‘ٹی وی رپورٹ)تحریک انصاف کے چیئر مین وسابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نیوٹرلز کے ساتھ میری کوئی لڑائی نہیں‘ اپنی فوج سے لڑنا نہیں چاہتا‘ میں نے کون سی ریڈ لائن عبور کی ہے‘اس لڑائی میں صرف ملک کمزور ہو گا، نیوٹرلز سے بات ہوئی تو ایک ہی موقف ہوگا فری اینڈ فیئر الیکشن ہو‘ چوروں سے کبھی اتحاد نہیں کروں گا‘ حکومت گرفتار کرنا چاہتی ہے تو کر لے کوئی ڈر نہیں‘ پیپلز پارٹی کے ساتھ بیٹھنے سے ہزار درجے بہتر ہے میں اپوزیشن میں بیٹھ جائوں‘ کسی بیرونی اور اندرونی طاقت کے ذریعے کوئی بیک ڈور رابطے نہیں‘پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ دونوں ہی ملک میں آزاد اور منصفانہ انتخابات نہیں چاہتے‘‘لاہور میں بیٹھے ایک آدمی کا مشن ہے کسی طرح چوروں کو الیکشن جتوا دیں‘ نامعلوم نمبر سے دھمکیاں دی جا رہی ہیں، لاہور والے کو بتا رہا ہوں جو مرضی کر لو تم صرف خود کو ذلیل کرو گے‘دھاندلی کے باوجود ضمنی الیکشن کے نتائج آئیںگے تو حمزہ واپس جائے گا‘مجھے جیل میں ڈال دیں، ملک کی خاطر اپنی جان کی قربانی دینے کو تیار ہیں‘چیف الیکشن کمشنر جتنا مرضی حمزہ شہبازاور مریم نوازکے پیروںمیں گرجائے ہم ان چوروں کو ضمنی انتخابات میں شکست دیں گے۔ جمعہ کو سینئر صحافیوں کے ساتھ ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ہماری حکومت میں مختلف چھوٹی جماعتیں بلیک میل کرتی رہیں‘بلیک میلنگ کے باعث پرویز الہٰی کو وزیر اعلی نامزد کرنا پڑا اور اسی وجہ سے پارٹی میں اختلافات ہوئے۔ عثمان بزدار کے علاوہ باقی امیدوار ایک دوسرے کے نام پر بطورِ وزیر اعلی متفق نہیں تھے، ہماری حکومت میں اگر بزدار کے خلاف کسی اور کو وزیراعلی بناتے تو وہ کرپشن کرتا۔ علیم خان اور پرویز الہی بطورِ وزیر اعلی ایک دوسرے کے نام پر راضی نہیں تھے‘کسی ایسے شخص کو وزیر اعلی نہیں بنا سکتا تھا جو ذاتی لوٹ مار کرتا۔پی ٹی آئی چیئر مین کا کہنا تھا کہ صاف شفاف الیکشن کے بغیر ملک بحرانوں سے نہیں نکلے گا‘تگڑی عوامی حکومت بنے گی تو ملکی معیشت چلے گی۔ان حکمرانوں سے تو کوئی بات کرنے کو بھی تیار نہیں۔ اگر ضمنی انتخاب میں دھاندلی کی تو یہ ملک کا اور نقصان کریں گے۔ مجھے کیا ہے میں تو اور انتظار کر لوں گا، نقصان ملک کا ہوگا۔ ان چوروں سے کبھی اتحاد نہیں کروں گا، چاہے اپوزیشن میں بیٹھنا پڑے ۔عمران خان نے کہا کہ جو بات کرنا چاہتا ہے دروازے کھلے ہیں‘کوئی لڑائی نہیں۔دریں اثناءخوشاب میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھاکہ خوشاب میں ایک لوٹا اور لوٹی کو شکست دینی ہے‘ انہوں نے کہا کہ ہمیں دھمکیاں دی جا رہی ہیں اور خوف دلایا جا رہا ہے‘لاہور میں بیٹھے ایک آدمی کا مشن ہے کسی طرح چوروں کو الیکشن جتوا دیں‘ ایک نامعلوم نمبر سے دھمکیاں دی جا رہی ہیں، لاہور والے کو بتا رہا ہوں جو مرضی کر لو تم صرف خود کو ذلیل کرو گے لوگ تمہیں برا بھلا کہیں گے، تم جتنی مرضی دھاندلی کرا لو، دھاندلی کے باوجود ضمنی الیکشن کے نتائج آئیںگے تو حمزہ واپس جائے گا۔ علاو ہ ازیں عمران خان سے پی ٹی آئی لاہور کے امیدوار ان نے ملاقات کی جس میں انتخابی مہم کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی چیئرمین نے کہاکہ ہم انشاء اللہ 17جولائی کو کلین سویپ کریں گے ۔ چیف الیکشن کمشنر کی بیگم کوراتوں رات ترقی دے دی گئی ۔دھاندلی کا پورا منصوبہ کامیاب کروانے کے لیے ترقیاں دی جا رہی ہیں ،ہم حمزہ ککڑی کو چیلنج کرتے ہیں جتنی مرضی ککڑیاں اکٹھی کر لیں ہم ساری ککڑیاں حلال کریں گے اور 17جولائی کومہر بلے پر لگے گی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں