41

پاکستان3 ارب ڈالر کے قطری منصوبے

پاکستان3 ارب ڈالر کے قطری منصوبے
اسلام آباد‘دوحہ(ایجنسیاں)قطر نے پاکستان میں3ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا اعلان کیا ہے۔قطری اخبارکے مطابق قطرکی سرمایہ کار اتھارٹی نے اعلان کیا ہےکہ اس کا پاکستانی معیشت کے اہم شعبوں میں 3ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنےکا منصوبہ ہے۔اخبار کے مطابق اس بات کا اعلان وزیراعظم شہباز شریف اور امیر قطر کے درمیان آج ہونے والی ملاقات کے موقع پرکیا گیا۔ ذرائع کے مطابق قطرپاکستان میں مختلف شعبوں میں 3ارب ڈالر کی فوری سرمایہ کاری کرے گا۔قطری حکومت کے سرکاری بیان کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف اور قطری امیر کی ملاقات میں اسٹریٹجک اور کھیلوں کے تعلقات بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ قطر نےکراچی اور اسلام آباد ائیرپورٹس پر سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔وزیراعظم شہباز شریف نےامیر قطر کے ساتھ اپنی ملاقات کو انتہائی نتیجہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے دو طرفہ تعلقات کو اسٹریٹجک مصروفیات کی اگلی سطح تک لے جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اپنے بیان میں وزیراعظم نے کہا کہ قطر کی طرف سے 3 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری پر امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی کا شکر گزار ہوں۔شہبازشریف نے فیفاورلڈکپ اسٹیڈیم 974کا بھی دورہ کیا ۔ اس موقع پر ان کا کہناتھاکہ ہمیں فخر ہے کہ فیفا ورلڈ کپ قطر2022ءکا آفیشل میچ بال “الریحلہ” پاکستان میں بنایا گیا ہے۔دریں اثناءقطر نے پاکستان کو یومیہ 3 سے4 ہزار ٹن مائع پیٹرولیم گیس (ایل پی جی) فراہم کرنے پر آمادگی ظاہرکی ہے۔وزیرمملکت برائے پیٹرولیم مصدق ملک کی دوحہ میں قطری ہم منصب سے ملاقات ہوئی جس میں مختلف منصوبوں پر بات چیت کی گئی۔مصدق ملک نے امید ظاہر کی کہ ایل پی جی درآمد کرنے کےلیے جلد میکنزم طے کرنے پر بات چیت شروع ہو جائےگی۔شہباز شریف بدھ کو قطر بزنس ایسوسی ایشن (کیو بی اے) کے وفد نے بھی ملاقات کی ۔ علاوہ ازیں پاکستان اور قطر نے دوطرفہ تعلقات ‘توانائی ‘تجارت ‘سرمایہ کاری اور دفاع سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے عزم کا اظہار کیاہےجبکہ امیر قطر کا کہنا تھاکہ دونوں برادر ممالک کے اسٹریٹجک تعلقات بہت اہمیت کے حامل ہیں ۔ وزیراعظم محمد شہباز شریف اور قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی نے دو طرفہ تعلقات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے باہمی دلچسپی کے تمام شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو مزید مستحکم کرنے کیلئے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا۔ دونوں رہنمائوں کے درمیان دوحہ میں دیوان امیری میں ملاقات ہوئی۔ وزیراعظم کے ہمراہ کابینہ کے وزراء اور سینئر ارکان سمیت اعلیٰ سطح کا وفد بھی تھا۔ دیوان امیری پہنچنے پر وزیر اعظم کا استقبال امیر قطر نے کیا ۔وزیراعظم کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ اس کے بعد دونوں رہنمائوں نے وفود کی سطح پر مشاورت کی، جس کے بعد امیر کی طرف سے وزیر اعظم اور ان کے وفد کے اعزاز میں ظہرانے کی ضیافت دی گئی۔دونوں فریقوں نے باہمی تجارت کو بڑھانے کیلئے ادارہ جاتی روابط کو مضبوط بنانے پر اتفاق کیا۔ مزید برآں زراعت ،خوراک ، توانائی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے اور پاکستان میں قابل تجدید توانائی، سیاحت اور مہمان نوازی کے شعبوں میں قطر کی سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی پر اتفاق کیا گیا ۔ قطر میں کام کرنے میں دلچسپی رکھنے والے پاکستانیوں کو مزید مواقع فراہم کرنے اور دفاع، ایوی ایشن اور میری ٹائم کے شعبوں میں تعاون کو وسعت دینے پر بھی بات چیت کی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں