21

مہنگی بجلی کے خلاف مظاہرے

مہنگی بجلی کے خلاف مظاہرے
کراچی‘راولپنڈی(ٹی وی رپورٹ)بجلی کے غیر معمولی زيادہ بل آنے پر مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیےگئے‘کراچی میں پاک کالونی ‘ملیر‘لانڈھی ‘بھینس کالونی ‘کورنگی اوردیگر علاقوں میںعوام سڑکوں پر نکل آئے ‘دھرنا دیکر شاہراہیں بلاک کردیں جس کی وجہ سے بدترین ٹریفک جام اور گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں ‘ راولپنڈی میں مظاہرین نے جی ٹی روڈبلاک کردی جبکہ ساہیوال ‘ پتوکی ‘جمبراور حبیب آباد میں بھی احتجاج کیاگیا۔ کراچی سے اسٹاف رپورٹر کے مطابق پاک کالونی کے مکینوں نے بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ اور پانی کی عدم فراہمی پر کے الیکٹرک اور کراچی واٹر بورڈ کے خلاف مظاہرہ کر کے مین منگھوپیر روڈ پر دھرنا دیدیاجس کے باعث منگھوپیر روڈ پر بدترین ٹریفک جام ہوگیا اور گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں ۔ بھینس کالونی پی ایم ٹی کٹ کے دونوں اطراف احتجاج کےباعث ٹریفک معطل ہوگیا۔داؤد چورنگی فیوچر موڑکےدونوں اطراف بھی شدید احتجاج کے باعث ٹریفک معطل ہو گیا ۔نیشنل ہائی وے ملیر معین آباداور ملوک ہوٹل کےقریب مکینوں نے زائد بلنگ پرکے الیکٹرک کے خلاف شدید احتجاج کیا اور دھرنادیدیا جس کے باعث مین نیشنل ہائی وے پر بد ترین ٹریفک جام ہوگیا ۔کورنگی کے مکینوں نے دارالعلوم چورنگی اور لانڈھی کے مکینوں نے داؤد چورنگی پر غیر اعلانیہ بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ اورزائد بلنگ پر احتجاج کرتے ہوئے دھرنادیدیا ۔ادھر راولپنڈی میں مظاہرین نے جی ٹی روڈ بلاک کردیا، ٹریفک جام سےگاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں، مظاہرین نے بجلی کے بلوں میں اضافی ٹیکس ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔مظفرگڑھ میں بجلی کے اضافی بلوں کے خلاف جماعت اسلامی کی جانب سے دھرنا دیا گیا، دھرنے سے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ عوام شدید مسائل سے دوچار ہیں اور حکمران اسلام آباد اور لاہور میں ذاتی جھگڑوں میں مصروف ہیں،کیا شہباز گل کو دکھانا ہی ہمارا قومی مسئلہ رہ گیا ہے؟۔ساہیوال میں بجلی کے بلوں میں ہوشربا اضافےکے خلاف کسان بورڈ نے مظاہرہ کیا اور واپڈا آفس کے سامنے احتجاج کیا، مظاہرین نے واپڈا حکام اور حکومت کے خلاف نعرے لگائے۔پتوکی، جمبر اور حبیب آباد میں بھی بجلی کی اوور بلنگ پر احتجاج کیا گیا، مظاہرین کا کہنا تھا کہ بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ بھی 12 سے 14گھنٹے ہوگئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں