34

قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد کی قرارداد منظور

اسلام آباد(ایجنسیاں)قومی اسمبلی میں وزیراعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد پیش کردی گئی ہے جس پر بحث جمعرات کو شروع ہوگی۔اپوزیشن کے161ارکان نے تحریک کی حمایت کردی‘قواعد کے مطابق تحریک عدم اعتماد پر تین دن کے بعد اور7دن کے اندرووٹنگ کرانا لازمی ہے۔ تحریک پیش کرنے پر ایوان میں اپوزیشن کے ارکان نے ڈیسک بجائے اور نعرے لگائے۔این این آئی کے مطابق پیر کو قومی اسمبلی کااجلاس ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری کی زیر صدارت ہوا ۔اجلاس کے ایجنڈے میں وزیراعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک بھی شامل تھی جو ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کی اجازت کے بعد ایوان میں پیش کی گئی ۔ اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے تحریک پیش کرتے ہوئےکہا کہ قومی اسمبلی کے رولز اینڈ پروسیجر اینڈ کنڈکٹ آف بزنس 2007 ذیلی شق 4 کے تحت وزیراعظم کے خلاف جمع کرائی گئی تحریک عدم اعتماد پیش کر رہا ہوں ۔ شہباز شریف کی جانب سے تحریک عدم اعتماد پیش کرنے کے بعد اراکین کی گنتی کی گئی اس موقع پر حکومتی اتحادی مسلم لیگ (ق) اور ایم کیو ایم کے اراکین اور تحریک انصاف کے منحرف اراکین ایوان میں موجود نہیں تھے ،قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد بحث کیلئے اپوزیشن کے 161 اراکین کی حمایت پر منظور کرلی گئی جس پر اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے تحریک پیش کی کہ اس ایوان کی رائے ہے کہ عمران خان وزیراعظم پاکستان قومی اسمبلی پاکستان کے اراکین کی اکثریت کا اعتماد کھو چکے ہیں لہذا انہیں عہدے پر فائز نہیں رہنا چاہیے ، تحریک پیش ہونے کے بعد ڈپٹی اسپیکر نے اجلاس جمعرات 31 مارچ شام چار بجے تک ملتوی کر دیا‘ اس روز تحریک پر بحث شروع ہو گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں