سلطان جلال الدین شاہ الخوارزم 140

قلعہ تلاجہ وادی سون ضلع خوشاب سلطان جلال الدین شاہ الخوارزم .محمد شیر سیالوی

قلعہ تلاجہ وادی سون ضلع خوشاب سلطان جلال الدین شاہ الخوارزم .
محمد شیر سیالوی
چوتھا اور آخری حصہ
قلعہ کی سیر کے بعد مغرب سے کچھ پہلے ہم جامعہ مدینۃ النبی یونیورسٹی نوشہرہ پہنچے جہاں جامعہ کے پرنسپل برادرم علامہ جاوید اقبال کھارا صاحب تلامذہ اور بہت سارے علماء کیساتھ استقبال کے لیے جامعہ کے باہر موجود تھے۔ واضح رہے کہ جامعہ مدینۃ النبی یونیورسٹی نوشہرہ جدید و قدیم علوم کا حسین امتزاج لیے پوری وادی سون میں ایک میناہ نور و مشعل راہ کے طور پر موجود ہے۔ برادرم کھارا صاحب کی تواضح و انکساری میں حضرت ضیاء الامت رحمۃ اللہ علیہ کی تربیت واضح نظر آ رہی تھی ۔
خدا سر سبز رکھے اس چمن کو ہمیشہ مہرباں ہوکر۔
یہاں عظیم مداح رسول محترم احمد اقبال مدنی صاحب نے خوبصورت نعت شریف سنائی ۔ اور مفتی صاحب نے علما کرام کو نۓ چیلنجز کے حوالے سے درپیش ذمہ داریوں سے کیسے نبردآزما ہوا جاۓ ، اس پہ چند منٹ روشنی ڈالی۔
بالآخر مخصر سا وقت وہاں گزار کر واپس شہر اقتدار کی جانب گامزن ہو لیے۔
یہاں تفریح طبع کے لیے چند سطریں ملاحظہ ہوں۔
اسلام آباد ٹول پلازہ کراس کر چکے تو گاڑی کے اندر سے خراٹوں کی آواز ابھری ہم چونکہ گاڑی میں صرف تین لوگ تھے ، مفتی صاحب ایک ذمہ دار آدمی ہیں آپ تو گاڑی میں سونے سے رہے اور ہم ویسے ہی تاریخ مرتب کرنے میں مگن تھے پھر لے دے کے ہمارا ڈرائیور راحیل شریف ہی رہ جاتا اور ویسے بھی خراٹوں کے ن غُنے کی ضمیر کا اشارہ ڈرائیور سیٹ ہی کی جانب ہے مگر چونکہ موصوف کا حلقہ احباب اتنا تگڑا ہے کہ اگر خراٹوں کا گمان اسکی طرف گیا تو پھر اگلے بہت سارے اسفار راحیل کے ساتھ ہیں لہٰذا گاڑی میں کون سویا اسکے طے کیے جانے کو کسی مناسب پہ چھوڑتے ہیں ۔
امید ہے آپکو چار حصوں پہ مشتمل ہمارا سفر نامہ پسند آیا ہوگا۔
اپنا اور اپنے چاہنے والوں کا بہت سارا خیال رکھیے گا ۔ اللہ حافظ
محمد شیر سیالوی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں