62

فوج اور عوام میں تقسیم کی مہم کا نوٹس، قومی سلامتی سب سے بڑھ کر، آئین و قانون کی حکمرانی کیلئے عسکری قیادت کے بہترین فیصلوں کا ہر قیمت پر ساتھ دیں گے، فارمیشن کمانڈرز کانفرنس

راولپنڈی (اے پی پی، ٹی وی رپورٹ) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت فارمیشن کمانڈرز کانفرنس ہوئی جس میں پیشہ ورانہ امور اور نیشنل سیکورٹی چیلنجز پر بریفنگ دی گئی۔ پاک فوج کے ترجمان ادارے انٹرسروسز پبلک ریلیشنز ( آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق کانفرنس کے شرکاء کو روایتی اور غیر روایتی خطرات سے نمٹنے پر بریفنگ دی گئی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق فورم نے ادارے اور سوسائٹی کے درمیان تقسیم پیدا کرنے کی مہم کا نوٹس لیا۔ فارمیشن کمانڈرز نے مؤقف اپنایا کہ اس پروپیگنڈے کا مقصد سوسائٹی اور ادارے کے درمیان خلیج پیدا کرنا ہے، پاکستان کی قومی سلامتی سب سے بڑھ کر مقدم ہے۔ فارمیشن کمانڈرز کانفرنس نے مؤقف اپنایا کہ پاک فوج کوئی سمجھوتہ کیے بغیر ریاستی اداروں کےساتھ ہمشہ کھڑی رہے گی۔ فارمیشن کمانڈرز نے عسکری قیادت کی جانب سے آئین اور قانون کی سربلندی کیلئے عسکری قیادت کے فیصلوں پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا، آئین وقانون کی حکمرانی کیلئے عسکری قیادت کے بہترین فیصلوں پر ہر قیمت پر ساتھ ہیں۔ اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاک فوج اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ ہے، پاک فوج ہر طرح کے حالات میں تمام اندرونی و بیرونی خطرات میں پاکستان کا دفاع کریگی۔ فارمیشن کمانڈرز کے اہم اہم ترین اجلاس میں پاک فوج کی جانب سے واضح پیغام دیا گیا کہ فوج آئین اور قانون پر عمل پیرا رہے گی، جو بھی ہوجائے فوج قومی سلامتی پرکبھی کمپرومائز نہیں کریگی۔ آرمی چیف نے فارمیشن کی ابھرتے ہوئے چیلنجز سے نمٹنے کے میکنزم کو سراہا، آرمی چیف نے فارمیشن کی آپریشنل تیاریوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔ فارمیشن کمانڈرز نے آئین اور قانون کی حکمرانی کو ہر قیمت پر برقرار رکھنے کے عسکری قیادت کے فیصلے پر بھر پور اور مکمل اعتماد کا اظہار کیا۔ پاک فوج اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ ہے اور ہر طرح کے حالات میں تمام اندرونی اور بیرونی خطرات کیخلاف پاکستان کی علاقائی سالمیت اور خودمختاری کا دفاع جاری رکھے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں