38

عمران پیوٹن طویل ملاقات، توانائی، تجارت، افغانستان، علاقائی صورتحال اور اسلاموفوبیا پر گفتگو، تنازعات مذاکرات اور سفارتکاری سے طے کئے جائیں، وزیراعظم

ماسکو(ایجنسیاں)وزیر اعظم عمران خان اور روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے جمعرات کوتین گھنٹے طویل ون آن ون ملاقات میں معیشت‘ تجارت اور توانائی کے شعبوں میں تعاون سمیت دوطرفہ تعلقات‘ علاقائی و بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال کیا۔دوران ملاقات یوکرین اور روس کے درمیان جاری کشیدگی کے ساتھ ساتھ افغانستان ‘علاقائی صورتحال اوراسلاموفوبیا کا موضوع بھی زیربحث آیا۔ روسی صدر نے وزیر اعظم عمران خان کے اعزاز میں ظہرانہ بھی دیا۔ قبل ازیں روسی فیڈریشن کے ایگزیکٹو ہیڈکوارٹرز کریملن پہنچنے پر صدر پیوٹن نے عمران خان کاپرتپاک استقبال کیا۔ عمران خان اور روسی صدر نے دوطرفہ تعلقات کے تمام پہلوئوں ، دوطرفہ تجارت، معیشت اور توانائی بالخصوص پاکستان اسٹریم گیس پائپ لائن منصوبہ میں تعاون اور علاقائی و بین الاقوامی امور پر بات چیت کی ۔ پیوٹن سےملاقات کے بعد عمران خان سے روس کے نائب وزیراعظم الیگزینڈر نوواک اور توانائی کے وزیر نیکولے شیلگینوف نے ایک وفد کےہمراہ ملاقات کی۔ این این آئی کے مطابق صدر ولادی میر پیوٹن سے ملاقات سے قبل ماسکومیں عمران خان کی زیر صدارت اعلیٰ سطح مشاورتی اجلاس ہوا جس میں شاہ محمود‘حماد اظہر‘فواد چوہدری‘معید یوسف و دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔اجلاس میں یوکرین پر روس کے حملے کے بعد بدلتی ہوئی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔عمران خان پاکستان میں متعلقہ اداروں کے ساتھ بھی رابطے میں ہیں۔قبل ازیں عمران خان نے دوسری جنگ عظیم کے دوران جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والےروسی فوجیوں کی یادگار پر پھولوں کی چادر چڑھائی۔ جمعرات کو یادگارآمد پردوسری جنگ عظیم میں جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔ دونوں ممالک کے قومی ترانے بھی بجائے گئے اور فوجی دستے نے مارچ پاسٹ کرتے ہوئے وزیراعظم کو سلامی پیش کی۔یادگار کریملن کے باہر الیگزینڈرگارڈن میں تعمیر کی گئی ہے‘اس موقع پر وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین‘وزیر منصوبہ بندی اسد عمر، وزیر توانائی حماد اظہر‘مشیرتجارت عبدالرزاق دائود‘مشیر قومی سلامتی معید یوسف اور تحریک انصاف کے رہنما عامر کیانی بھی موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں