14

سزا یافتہ شخص کی طلبی پر کابینہ کا لندن جانا عوام کی توہین، عمران خان

جہلم(این این آئی)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ اربوں روپے کرپشن کیسز میں مفرورسزایافتہ شخص نواز شریف کی طلبی پر وفاقی کابینہ لندن جارہی ہےجوملک کی توہین ہے‘ مریم نواز اور بڑا بھائی فوج کے خلاف بیان دیتا ہے اور چھوٹا بھائی بوٹ پالش کرتا ہے، شہباز شریف شرم کرو، میں نے جس میر جعفر کا ذکر کیا وہ تم ہو ، زر داری تم نے سندھ کو لوٹا، ظلم کیا اور جہاز بھر بھر کے پیسے ، ڈالرز باہر بھیجے، سندھ کو زرداری سے آزاد کراؤں گا‘میں نےپہلے ہی کہا تھا اقتدار سے نکلوں گا تو زیادہ خطرناک ہوں گا‘بھارت نے ڈس انفارمیشن لیب بنا کر فوج اور عمران خان کو نشانہ بنایاجس نے پاکستان پر تنقید کی، پاکستانی فوج اور مجھے نشانہ بنایا، میرے دور میں نریندر مودی کی جرات نہیں تھی کہ ہماری فوج کے خلاف بات کرتا،پی ٹی آئی اور فوج کے ہوتے ہوئے پاکستان کو کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا۔منگل کو جہلم میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میں نے کہا تھا اقتدار سے نکلوں گا تو زیادہ خطرناک ہوں گا، ادھر تو میں بند تھا سارا دن آفس میں رہ کر وزن بھی بڑھ گیا، انتظار میں تھا کہ عوام میں واپس جاؤں۔26 سال سے قوم کی خودداری کو جگانے کی کوشش کررہا تھا، آج پاکستان کو ایک قوم بنتے دیکھ رہا ہوں یہ اللہ کا بڑا کرم ہے۔ میرا جینا مرنا پاکستان میں ہے ، میرا نام ای سی ایل میں ڈالو ، تم شہبازشریف کہہ رہے ہو کہ عمران خان فوج کے خلاف بات کررہا ہے ؟ کبھی نوازشریف اور شہبازشریف کے منہ سے کشمیر کی بات سنی؟ میں نے روس کے صدر سے30فیصدکم قیمت پر تیل خریدنے کی بات کی‘شہبازشریف کیا تم میں جرات ہیکہ روس سے گندم تیل خریدنے کی بات کرو؟ ان کا کہنا تھا کہ امریکا بھارت کو کچھ نہیں کہتا کیونکہ ان کی خارجہ پالیسی آزاد تھی ، پیسے کے غلام کبھی قوم کے لیے نہیں کھڑے ہوئے ،ایک ذوالفقار علی بھٹو کھڑے ہوئے تو سب اس کے خلاف ہوگئے اور پھانسی دی گئی، ساڑھے تین سال میں سب سے زیادہ شرم تب آئی جب باہر جاکر دوست ممالک سے قرض مانگنا پڑا، میں نے کبھی غیروں سے پیسے نہیں مانگے‘انہوں نے ملک کا دیوالیہ نکالا تھا اس لیے باہر سے پیسے مانگنے پڑے‘ جب کہتے ہو بھکاری ہیں تو ہمیں بھکاری بنایا کس نے ؟ کون اس ملک سے پیسا باہر لے کر گیا ہے ؟یہ اقتدار میں آگئے اور اب عہدوں کی بندربانٹ ہورہی ہے۔دریں اثناء عمران خان نے سپریم کورٹ سے گورنر پنجاب کی برطرفی پر ازخود نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدرکے منصب کی توہین کی گئی‘امپورٹڈ کٹھ پتلیاں پنجاب میں آئینی انتشار و فساد کو ہوا دے رہی ہیں۔ انہوں نے عدالت عظمی سے پنجاب میں آئین و قانون کی کھلی توہین کے فوری نوٹس کا مطالبہ کر دیا۔عمران خان نے اپنے بیان میں کہا کہ امپورٹڈ حکومت کی جانب سے پاکستان کے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں سنگین نوعیت کا آئینی بحران پیدا کردیا گیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں