364

سرکاری ادارے حکومت سے اپنی زمینیں چھپا رہے ہیں ہم ان سب کو جیلوں میں ڈالیں گے : وزیراعظم

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں ایک کروڑ گھروں کی کمی ہے اور 50 لاکھ گھروں کا ہدف انتہائی مشکل چیلنج ہے، ہماری ٹاسک فورس بڑی محنت سے کام کررہی ہیں اور یہ ٹاسک فورس میرے ماتحت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہاؤسنگ اسکیموں میں نجی سیکٹر کو کام کرنا چاہیے، جب ہاؤسنگ شروع ہوتی ہے تو اس سے جڑی چالیس انڈسٹریز بھی شروع ہوجاتی ہیں، ہاؤسنگ اسکیم سے چالیس صنعتوں کو فائدہ ہوگا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے ملک ایلیٹ کلاس کا بن چکا ہے، غریبوں کو اوپر لائے بغیر کوئی بھی معاشرہ ترقی نہیں کرسکتا، اسلام آباد میں غریبوں کے لیے کوئی منصوبہ بندی نہیں کی گئی، ہم ہاؤسنگ اسکیم میں کچے آبادیوں کو ریگولرائز کرنے کے لیے پوری منصوبہ بندی کررہے ہیں، ہم نے کثیرالمنزلہ عمارتیں بنانی ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ سرکاری محکموں میں بہت زمینیں ہیں، ان زمینوں سے متعلق معلومات لیں، بہت سے سرکاری محکمے حکومت کو اپنی زمین سے متعلق معلومات نہیں دے رہےتھے، ایسا نظام بن گیا ہے کہ ادارے حکومت سے اپنی زمینیں چھپا رہے ہیں، سرکاری زمینیں چرانے والوں کو جیلوں میں ڈالیں گے، قبضے کو جرم قرار دینے کے لیے قانون سازی کررہے ہیں، اسلام آباد میں ہی 500 ارب روپے کی زمین واگزار کراچکے ہیں، اسلام آباد سمیت پورے ملک میں بڑے بڑے قبضہ گروپ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہاؤسنگ اسکیم نچلے طبقے کے لیے ہے، ورلڈ بینک نے ہاؤسنگ پروگرام میں ہمارے ساتھ تعاون سپورٹ کرنے کا کہاہے، چین اور ملائیشیا کی کمپنیوں نے بھی ہاؤسنگ اسکیم میں کام کرنےکی دلچسپی ظاہر کی ہے، حکومت نے گھروں کی تعمیر نہیں کرنی بلکہ نجی سیکٹر کو آسانی فراہم کرنی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ٹیکس ہم نہیں دیتے لیکن خیرات سب سے زیادہ دیتے ہیں، حکومت پر بھروسہ نہیں ہوتا لوگ اس وجہ سے ٹیکس نہیں دیتے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں