24

سابق حکمرانوں نے سڑکوں کا ایک ہزار ارب چرالیا، کوئی ثبوت نہیں چھوڑا، عمران خان

اسلام آباد وزیراعظم عمران خان نےہمہ جہت ترقی کے لئے طویل المدت منصوبہ بندی کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئےکہاہے کہ ہماری پوری کوشش ہے کہ ترقی کا ایسا نظام وضع کریں جس میں کوئی طبقہ اور علاقہ محروم اور پیچھے نہ رہے ‘سارے ملک کو یکساں طورپر آگے بڑھنے کے مواقع فراہم کئے جائیں ‘ماضی میں ترقی صرف بڑے شہروں اور لاہور تک محدود تھی۔باقی علاقوں کو نظر انداز کیا گیا‘2013ءکے مقابلے میں 2021ء میں جو سڑکیں بنیں ان کی لاگت کم ہے‘ماضی میں سڑکوں کی تعمیر میںکرپشن کی گئی‘سابق حکمرانوں سڑکیں بنانے کے منصوبوں میں قوم کا ایک ہزارارب روپیہ چوری کرلیا اور کوئی ثبو ت بھی نہیں چھوڑاُایک مقروض ملک میں اتنی بڑی کرپشن ہو رہی تھی‘ریاست مدینہ کی طرز پر ملک کی تعمیر کر رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے بدھ کو ہکلہ ۔ڈی آئی خان موٹروے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیراعظم نے کہا کہ ماضی میں ترقی صرف بڑے شہروں اور لاہور تک محدود تھی۔باقی علاقوں کو نظر انداز کیا گیا۔ بدقسمتی سے ساری ترقی پذیر دنیا کا یہی مسئلہ ہے کہ کچھ لوگ بہت امیر اور باقی غریب رہ جاتے ہیں۔ ایک دو علاقوں پر زیادہ سرمایہ کاری کی جاتی ہے جبکہ باقی علاقے پیچھے رہ جاتے ہیں۔ کبھی بھی کوئی ملک اس طرح ترقی نہیں کر سکتا۔گزشتہ حکومت نے جتنے پیسوں میں ایک سڑک بنائی ہم نے اتنے پیسوں میں دوگنی سڑکیں بنا دیں۔ اس سے یہ بات واضح ہو جاتی ہے کہ کسی کی جیب میں بہت پیسہ جارہا تھا۔ کم از کم ایک ہزار ارب روپیہ مختلف لوگوں کی جیبوں میں گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں