48

سابقہ حکومتوں نے بھیک مانگ کر گزارا کیا، وزیراعظم

اسلام آباد(ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان نے اوور سیز پاکستانیوں کو ملکی صنعتوں میں سرمایہ کاری کی دعوت اور پانچ سال کے لئے ٹیکسز سے استثنیٰ دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماضی میں جو بھی حکومتیں آئیں انہیں پتہ ہی نہیں تھاکہ ملک کی سمت کس طرف ہونی چاہیے اور ہم مختلف راستوں پر چلتے رہے‘ ہم صرف ٹیکسٹائل برآمدات کے ذریعے اوپر نہیں جا سکتے‘کوئی بھی ملک صرف سبزیاں اور گندم بیچ کر ترقی نہیں کر سکتا بلکہ ملک صنعتوں کی بنیاد پر آگے بڑھتے ہیں‘صنعت کاروں کوجوایمنسٹی ہم نے آج دی ہے وہ پہلےدن دینی چاہئے تھی ‘ سابقہ حکومتوں نے بھیک مانگ کر گزارا کیا ‘ پہلے یہ ہوتاتھاپیسے دو تو ہم جنگ لڑیں گے‘پہلی بار ہم روس کے خلاف جہاد کے نام پر لڑے‘امریکا جب آیا تو یہی جہاد دہشت گردی بن گیا‘ہمیں اپنی غلطیوں سےسیکھناہوگا‘جب کوئی ملک ہاتھ پھیلا کر پھرتا ہے کوئی ہمیں امداد دیدے تو پھر اسے اپنی خارجہ پالیسی تبدیل کر نا پڑتی ہے‘ ہمار ے ملک میں اسمال اینڈ میڈیم انڈسٹریز کی ترقی میں بے پناہ رکاوٹیں ڈالی گئیں لیکن اب انہیں ختم کر کے مراعات اور سہولیات دے رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو گورنر ہائوس لاہور میں انڈسٹریل پیکج کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ مینو فیکچررز اور انڈسٹریز کے بغیر کبھی کوئی بھی ملک عظیم نہیں بن سکتا ۔پاکستان وہ ملک تھا جسے جانا کہیں اور تھا لیکن ہم کسی اور سمت نکل گئے ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے جو ایمنسٹی دی وہ اوپن نہیں دینی چاہیے تھی بلکہ اسے انڈسٹری کو براہ راست دینا چاہیے تھا ۔ ہماری غیر روایتی انڈسٹری بہت بڑی ہے ہمیں اسے باضابطہ بنانے کے لئے کام کرنا چاہیے‘جب برآمدات نہیں بڑھیں گی تو ڈالرز کا بحران ہر دو ر میں آئے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں