68

خدارا اپنی بیویوں کو اپنے کاندھے دیں – اسریٰ‌ غوری

دو دن سے اس خط کو دیکھتی ہوں، بڑی مشکل سے چند سطریں پڑھ پاتی ہوں ۔۔۔۔۔ بری طرح رو پڑتی ہوں اور جلدی جلدی اس کو نگاہوں کے سامنے سے ہٹادیتی ہوں۔۔۔ ہمت نہیں کرپارہی تھی کہ کچھ لکھ سکوں۔۔۔۔ مگر اب یہ پھر سامنے آگیا جیسے تقاضا کررہا ہو۔۔۔۔لکھو مجھ پر لکھو۔۔۔۔۔

اس خط کے ساتھ پنکھے سے لٹکی لاش کی تصویر لگانی کی ہمت نہیں۔۔۔۔
ب سے پہلے تو ماں پاب کو کہوں گی کہ۔۔۔۔ یہ جن بیٹیوں کو آپ شہزادیوں کی طرح پال پوس کر جوان کرتے ہیں نا۔۔۔ جن کو ٹوٹے گلاس کی کرچی بھی چبھنے پر آپ رات رات بھر بے سکوں رہتے تھے نا۔۔۔ ان بیٹیوں کو زندگی بھر کے لیے کسی کے حوالے کرتے وقت اتنی چھان بین تو کرلیں کہ اگلا کہیں اس کی روح کو زخم زخم کرکے مارنے والا تو نہیں۔۔۔۔

خدا کے لیے بیٹیاں بوجھ نہیں جن کو اتار پھینکنے کے لیے آپ کسی کے بھی حوالے کردیں۔۔۔ گھروں میں بیٹھی ہیں نا، ان کو پڑھائیں لکھائیں، معاشرے میں اک مقام بنانے دیں۔۔۔۔ مگر خدارا! یوں نا کریں کہ پھر آپ کو ان کی لاشیں ملیں یا وہ زندہ لاش بن کر اپنی زندگیاں ختم کردیں۔۔۔

اور جو لے جانے والے ہیں۔۔۔ ان کو یہ کہنا کہ یہ جو آپ اپنے گھر میں اک انسان نما “چیز” اٹھاکر لائے ہیں نا۔۔۔ یہ مکمل انسان ہے، دل دماغ گوشت پوست کی انسان۔۔۔ اس کے سینے میں آپ کی طرح کا ہی اک دل دھڑکتا ہے۔۔۔ اس کو بھی درد ہوتا ہے۔۔۔ اس کو طعنہ دے دے کر یہ باور کروانا کہ دنیا کی سب سے بری عورت ہے، اس نے یہ اور یہ نہیں کیا۔۔۔ یہ اور یہ کمی ہے۔۔۔ سوچیے تو وہ آپ کی کون کون سی کمی کو برداشت کررہی ہوگی؟
اس بچی نے کہا میرے دل کی سننے والا بھی کوئی نہیں۔۔۔ اس لیے میرے پاس خودکشی واحد راستہ بچا ہے۔۔۔

یہ جو بیویاں ہوتی ہیں نا صاحب ! یہ آنے سے پہلے ہی اپنے شوہر کو خوابوں میں اپنا بیسٹی بناکر آتی ہیں ۔ یہ سمجھتی ہیں کہ جس شخص کے پاس جارہی ہیں، وہی ان کی کل کائنات ہوگا۔۔۔۔ اور یہ اس کی دنیا ہوں‌گی۔۔۔۔ ( یہی تو سنتی ہیں بچپن سے) . مگر جب معاملہ اسکے ساری سوچوں خوابوں کے برعکس نکلتا ہے تب بھی ….
یہ آپ سے خفا بھی ہو تو آپ سے لاتعلق نہیں رہتی… آپ کی ہر طرح کی ضرویات کو پورا کرنے کی فکر میں رہتی ہے …
یہ آپ کے طعنوں کے نیل اپنی روح پر لیے زمانے کے سامنے مسکراتی یہ ظاہر کرتی ہے کہ یہ دنیا کی سب سے خوش قسمت عورت ہے ………
یہ آپ کے ہر بری عادات کو جھیل کر آپ کو برداشت کرتی ہے….. آپ کے انبکس میں آنے والی غیر عورتوں کی قابل اعتراض تصاویروں سے لیکر آپ کے عشق لڑاتے مدہوش جملوں تک سے واقفیت رکھنے کے باوجود ……. ہاں اس سب کے باوجود یہ آپ کی نام نہاد عزت کو زمانے بھر کے سامنے اپنے زخم خوردہ وجود سے ڈھانپے رکھتی ہے ..آپ کے کیے گیے ہر ظلم کے باوجود اپنی ذات کی نفی کرکے اسے مٹی کرکے آپ کے لیے حاضر رہتی ہے…….. اور پھر بھی بدلے میں بھی ذلت اور طعنے ہی پاتی ہے ……
مگر جب یہ سب اسکی برداشت سے باہر ہوجاتا ہے تو ۔۔ تو وہ دو راستوں پر نکل پڑتی ہیں ۔۔۔ ایک تو یہ کہ سوشل میڈیا پرکسی اور مرد کے ہاتھوں شکار بن جاتی جو انکی ساری روداد سن کر انکی ہمدردیاں سمیٹ لیٹا اور انکے لئے اپنا مخلص کاندھا پیش کردیتا اور وہ اس کاندھے کے بدلے سب گنوا دیتی ہیں ۔۔۔۔

مگر جب اس جب معاملہ اس کے برعکس نکلتا ہے۔۔۔ تو وہ دو راستوں پر نکل پڑتی ہیں۔۔۔ ایک تو یہ کہ سوشل میڈیا پرکسی اور مرد کے ہاتھوں شکار بن جاتی ہے جو ان کی ساری روداد سن کر ان کی ہمدردیاں سمیٹ لیتا اور ان کے لیے اپنا “مخلص” کاندھا پیش کردیتا اور وہ اس کاندھے کے بدلے سب گنوا دیتی ہیں۔۔۔ (میرے پاس دسیوں ایسی بچیوں کی کالز، میسجز آتے ہیں جو ایسے راستے پر چل پڑی ہیں) کہ شوہر دوسری عورتوں سے تعلقات رکھتا ہے۔ اسے بیوی میں بس عیب ہی عیب نظر آتے ہیں۔ نفرت اور ذلت کی ماری یہ عورت کسی اور کا شکار بن جاتی۔۔۔ یا پھر دوسرا راستہ یہ بچتا ہے کہ وہ خود کو زندہ لاش بنانے کے بجائے اک ہی بار لاش بنا ڈالتی ہیں۔۔۔

لڑائی جھگڑے، ان بن ہونا ہر گھر میں اور ہر رشتے میں ہوتا ہے، مگر یہ جو ذلت آمیز رویہ اور طعنے بیویوں کے خاص کرلیے جاتے اس روش کو ختم کیجیے۔۔۔ یہ روش زندہ نہیں چھوڑتی، یہ زندہ لاش بنادیتی ہے۔۔۔ کبھی خفا ہوں تو کبھی لاڈ سے ان کی سنیے بھی۔۔۔ اپنی بیویوں کو اپنے کاندھے دیں۔۔۔ خدارا اپنے کاندھے دیں اس سے پہلے کہ یا وہ کسی شکاری کا شکار بن جائیں۔۔۔ یا پھر۔۔۔ چار کاندھوں پر چلی جائیں۔۔۔۔ اور جاتے جاتے بھی تو کہتی ہیں۔۔۔۔۔
“خوش رہیے گا” An advance Happy birth Day to you ”
اللہ جی اپنی بندی کو معاف کردیجیے گا۔۔۔۔ آپ کی رحمت آپ کی سزا پر بھاری ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں