17

بھارت: ہندو انتہا پسندوں کی مسلمانوں کی مذہبی آزادی، حقوق کو پامال کرنے کی ایک اور کوشش

بھارت میں ہندو انتہا پسندوں کی جانب سے مسلمانوں کے آزادانہ عبادت اور مذہبی اظہار کے حقوق کو پامال کرنے کی ایک اور کوشش کی گئی ہے۔
بھارتی شہر ممبئی میں مساجد کو اذان کی آواز کم کرنے پر مجبور کردیا گیا، بھارتی سیاسی جماعت مہاراشٹر نو نرمان سینا (Maharashtra Navnirman Sena ) کے رہنما راج ٹھاکرے نے اپریل میں دھمکی دی تھی کہ اذان کی آواز کم نہ کی گئی تو مساجد کے باہر ہندو عبادت کی جائے گی۔
خبر ایجنسی کے مطابق ممبئی کی سب سے بڑی مسجد کے مرکزی خطیب محمد اشفاق قاضی اور مہارا شٹر کے تین دیگر سینئر علما کا کہنا ہے کہ ریاست کے مغرب میں 900 سے زیادہ مساجد نے مقامی ہندو سیاست دان کی شکایات کے بعد اذان کی آواز کم کرنے پر اتفاق کیا ہے۔
محمد اشفاق قاضی کا کہنا ہے کہ اذان کی آواز کتنی ہونی چاہیے یہ ایک سیاسی مسئلہ بن گیا ہے، مسلمانوں اور ہندوؤں کے درمیان تشدد کے خطرے کو کم کرنے کے لیے راج ٹھاکرے کے مطالبات کو مانا گیا۔
بھارت میں اذان کا مسئلہ ریاست مہاراشٹر کے علاوہ بھی دیگر ریاستوں تک پھیلا ہوا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں