Molana Fazal ur rehman 126

اپوزیشن جماعتوں میں عدم اعتماد، مشترکہ احتجاجی تحریک کھٹائی میں پڑگئی

1 / 100

اپوزیشن جماعتوں میں عدم اعتماد کے باعث مشترکہ احتجاجی تحریک کھٹائی میں پڑگئی، مولانا فضل الرحمٰن اکیلے ہی تحریک چلائیں گے۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرس کے امکانات بھی کم ہوگئے ہیں۔

ایسے میں جمعیت علماء اسلام (ف) نے حکومت کے خلاف اکیلے ہی تحریک چلانے کی تیاریاں شروع کردیں۔

جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے7 ستمبر کو پشاور میں احتجاجی ریلی کی کال دے دی ہے۔

احتجاجی تحریک سے قبل مولانا فضل الرحمٰن نے پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) سے تحریری معاہدے کی شرط رکھ دی۔

عید الاضحیٰ سے قبل مولانا فضل الرحمٰن نے ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی قیادت سے تحریری معاہدے کی یقین دہانی لی تھی۔

ذرائع کے مطابق مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی نے مولانا کو یقین دہانی کے بعد دوبارہ قانون سازی میں حکومت کا ساتھ دیا۔

آل پارٹیز کانفرنس کے ایجنڈے کے لیے عید کے بعد رہبر کمیٹی کا اجلاس ہونا تھا۔

عید سے پہلے اور پھر پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بڑی جماعتوں کے کردار نے مولانا کو ناراض کردیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں