PM-Imran-Khan 49

انگلش میڈیم سسٹم ذہنی غلامی، ہماری تنزلی کی بڑی وجہ انگریز کا تعلیمی نظام، ہمیں اسلام اور اپنے کلچر سے دور کیا، عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ انگلش میڈیم سسٹم ذہنی غلامی لایا‘ہماری تنزلی کی بڑی وجہ انگریز کا تعلیمی نظام ہے جس نے ہمیں اسلام اوراپنے کلچر سے دورکیا ‘یکساں تعلیمی نصاب کاآنیوالے وقت میں بہت بڑا فائدہ ہو گا‘ موبائل فون اورکمپیوٹر کے غلط استعمال کی وجہ سے جنسی جرائم بڑھ گئے ہیں ‘مینار پاکستان واقعہ انتہائی شرمناک اور تکلیف دہ ہے‘مناسب تربیت نہ ہونے کے سبب نئی نسل تباہی کی طرف جا رہی ہے۔

ہمیں چاہئے کہ اپنے بچوں کو اپنی زبان میں پڑھانے کے ساتھ ساتھ ان کی اچھی تربیت کریں اور انہیں سیرت النبی ۖ کے بارے میں بھی تعلیم دیں‘ وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی سربراہی میں پنجاب حکومت ڈیلیور کررہی ہے تاہم منصوبوں کی تشہیر نہ کرنے کی وجہ سے کہا جاتا ہے کہ پنجاب تباہ ہوگیا ۔

راوی ریور پراجیکٹ کے تحت تین بیراج بنائے جائیں گے‘صوبے میں نیا بلدیاتی قانون جلد بنایاجائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو لاہور میں تقریب ‘جائزہ اجلاس اور صوبائی وزیربلدیات میاں محمود الرشید سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

تفصیلات کے مطابق گورنر ہائوس لاہور میں پنجاب ایجوکیشن کنونشن 2021 کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پنجاب میں اس وقت جتنا کام ہو رہاہے اتنا کسی صوبے میں نہیں ہو رہا لیکن پھر بھی لوگ تنقید کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ پنجاب تباہ ہو رہاہے۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ گزشتہ حکومتوں میں چھوٹے کام کی بڑی تشہیر ہوتی تھی اور اب بڑے کاموں کی تشہیر چھوٹی ہوتی ہے۔ بدقسمتی سے ماضی میں تعلیم پر کسی نے زور نہیں دیا اور ملک میں شارٹ ٹرم سوچ عام رہی۔

آہستہ آہستہ سرکاری تعلیمی ادارے نیچے جانا شروع ہو گئے اور ایک چھوٹا سا پرائیویٹ اسکول سسٹم اوپر چلا گیا جس نے ایک طبقہ کو ذہنی غلام بنا ڈالا اور یہ سب انگلش میڈیم ایجوکیشن کی وجہ سے ہوا۔دنیا میں کہیں نہیں ہوتا کہ کوئی قوم اپنی زبان سے ہٹ کر دوسری زبان کو اپنائے۔ہمیںکرپشن کے خاتمے کیلئے ٹیکنالوجی پر توجہ دینا ہو گی۔

وزیراعظم نے کہا کہ مینار پاکستان کا واقعہ شرمناک ہےکیونکہ عورت کی جو عزت پاکستان میں ہوتی تھی مغرب میں نہیں تھی ‘ایسے واقعات کی وجہ بچوں کی تربیت نہ ہونا ہے ایسے واقعات نہ دین اور نہ ہمارے کلچر کا حصہ ہیں یہ ہمارے موبائل فون کے استعمال کا ایک منفی پہلو ہے۔

دریں اثناء عمران خان نے کہا ہے کہ کسانوں کی معاونت حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، زراعت ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے، حکومت ایگریکلچرل ٹرانسفارمیشن پلان سے زرعی شعبے میں بڑے پیمانے پر اصلاحات لا رہی ہے جن کے مثبت اثرات سامنے آ رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں