29

افغانستان سے نکلنے کے بعد مسلسل سفارتکاری کا دور شروع کیا، صدر بائیڈن

امریکی صدر جو بائیڈن نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان سے نکلنے کے بعد امریکا نے مسلسل سفارتکاری کا دور شروع کیا ہے۔

امریکی صدر نے کہا کہ عالمی چیلنجز کے مقابلے کے لیے مل کر کام کرنا ہوگا۔ انڈوپیسفک سمیت دیگر چیلنجز کے مقابلے کے لیے کثیر فریقی اداروں کا استعمال کرنا ہوگا۔

صدر جو بائیڈن کا مزید کہنا تھا کہ امریکا صرف صاف اور قابل حصول ملٹری مشنز میں مصروف رہے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ امریکا اگلے سال اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کی سیٹ دوبارہ لینے کے لیے تیار ہے۔

انھوں نے کہا کہ امریکا کمزور ممالک پر غلبہ حاصل کرنے کیلیے مضبوط ممالک کی کوششوں کی مخالفت کریگا۔ ہم نئی سرد جنگ نہیں چاہ رہے۔ امریکا پرامن اصلاحات کرنے والی کسی بھی قوم کے ساتھ کام کرنے کو تیار ہے۔

امریکی صدر کا کہنا تھا کہ ایران کو جوہری ہتھیار بنانے سے روکنے کیلئے امریکا اپنے عہد پر قائم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں