41

اشتعال انگیز بیانات، فوج برہم، آرمی کو سیاسی گفتگو سے دور رکھیں، بعض سیاسی رہنما، چند صحافی اور تجزیہ کاروں کے ریمارکس انتہائی نقصان دہ ہیں، ترجمان ISPR

راولپنڈی (ایجنسیاں)پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ نے کہا ہے کہ مسلح افواج کوسیاسی گفتگو میں گھسیٹنے کی کوشش کی جارہی ہے‘ ملک کے بہترین مفاد میں پاک فوج کوسیاسی گفتگوسے دور رکھاجائے ۔ اتوار کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہےگزشتہ کچھ عرصے سے ملک میں جاری سیاسی گفتگو اور مباحثوں میں پاکستان کی مسلح افواج اور ان کی قیادت کو دانستہ طور پر گھسیٹنے کی کوششیں کی جارہی ہیں، مسلح افواج کے ساتھ ساتھ ان کی اعلیٰ قیادت کے حوالے سے براہ راست، واضح اور مختلف حوالوں سے باتیں کی جارہی ہیں، جس میں عوامی فورمز اور سوشل میڈیا سمیت مختلف پلیٹ فارمز پر کچھ سیاسی شخصیات، بعض صحافی اور تجزیہ کار شامل ہیں، ان سیاسی مباحثوں اور گفتگو میں غیر مصدقہ، ہتک آمیز اور اشتعال انگیز بیانات اور ریمارکس مسلح افواج اور ان کی اعلیٰ قیادت کے بارے میں دیئے جارہے ہیں جو کہ انتہائی نقصان دہ ہیں‘پاکستان کی مسلح افواج ایسے غیر قانونی اور غیر اخلاقی عمل کا حصہ نہیں ہوسکتیں، آئی ایس پی آر نے واضح کیاہے کہ فوج اور اس کی قیادت کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہے، اسے سیاست میں گھسیٹنا غیر اخلاقی اور غیر قانونی ہے، ایسے غیرذمہ دارانہ بیانات سے اجتناب بہت ضروری ہے، مسلح افواج اور اس کی قیادت توقع کرتی ہیں کہ سب افراد قانون کی پاسداری کریں گے اور مسلح افواج کو ملک کے بہترین مفاد میں سیاسی گفتگو سے دور رکھا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں