62

سبزوسیاہ چائے میں بلڈپریشر کے خلاف نئے اجزا دریافتشیئرٹویٹ

52 / 100

سبزوسیاہ چائے میں بلڈپریشر کے خلاف نئے اجزا دریافت
امریکی ماہرین نے سبز اور سیاہ چائے میں بلڈ پریشر کم کرنے والے اہم اجزا دریافت کرلیے ہیں۔ فوٹو: فائل

کیلفورنیا: سبز اور سیاہ چائے میں پہلے سے موجود دو کیمیائی اجزا کے معلق انکشاف ہوا ہے کہ وہ بلڈ پریشر کو معمول پر رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

یونیورسٹی آف کیلیفورنیا (یوسی ایل) ، اِرون کے سائنسدانوں نےکہا ہے کہ دونوں طرح کی چائے میں ایسے کیمیکل موجود ہوتے ہیں جو خون کی رگوں میں آئن چینل پروٹین کو سرگرم کرکے نسوں اور رگوں کو آرام کی صورت میں رکھتے ہیں اور اس طرح بلڈ پریشر بڑھنے کو روکتے ہیں۔

اس طرح بلڈ پریشرمعمول پر رکھنے والی نئی ادویہ کی تیاری کی راہیں بھی کھلیں گی۔ یو سی ایل میں فزیالوجی کے شعبے سے وابستہ ڈاکٹر جیفرے ایبٹ اور ان کی ساتھی کیٹلن ریڈفورڈ، نے کہا ہے کہ چائے میں کیٹاچِن قسم کے دو عدد فلے وینوئڈ پائے جاتے ہیں ۔ ان میں سے ہر ایک خون کی نالیوں میں موجود ’کے سی این کیو فائیو‘ نامی آئن چینل کو سرگرم کرتا ہے۔ یہ پروٹین ہموار پٹھوں کے اندر بکثرت ہوتا ہے جہاں خون کی چھوٹی بڑی رگیں بھی موجود ہوتی ہیں۔
معلوم ہوا ہے کہ چائے کے مخصوص اجزا ، ’کے سی این کیو فائیو‘ چینل کو تیزی سے کھولتے ہیں۔ اس طرح رگیں سکڑتی نہیں اور خون کا بہاؤ ہموار انداز میں جاری رہتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس چینل کو سرگرم کرکے بلڈ پریشر میں اضافے کو قابو کیا جاسکتا ہے۔

دوسری اہم بات یہ ہے کہ شاید چائے کے یہ دونوں اجزا خون کی رگوں کو اس لحاظ تک بہتر رکھتےہیں کہ اس سے مرگی اور دماغی امراض میں کمی بھی ممکن ہوسکتی ہے۔ تاہم ان کا اصرار ہے کہ سیاہ چائے میں دودھ یا پاؤڈر نہ ڈالا جائے بلکہ اسے قہوے کی طرح ہی استعمال کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں