imran khan1 22

فارن فنڈنگ کیس

60 / 100

فارن فنڈنگ کیس: پاکستان تحریک انصاف نے سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی اوپن کرنے کے وزیر اعظم کے بیان کی نفی کر دی
حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف نے فارن فنڈنگ کیس کے معاملے میں حال ہی میں وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے اس معاملے کی کارروائی کو اوپن کورٹ میں کروانے کے بیان کی مخالفت کر دی ہے۔

تحریک انصاف نے عمران خان کے اس بیان کی نفی کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حوالے سے الیکشن کمیشن پہلے ہی ایک وضاحتی بیان جاری کر چکی ہے کہ غیر ملکی فنڈنگ کے معاملے کی تحقیقات کے لیے سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی ان کیمرہ ہوگی۔

پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے یہ جواب فارن فنڈنگ کیس میں پارٹی کے وکیل شاہ خاور کی طرف سے الیکشن کمیشن میں جمع کروایا گیا ہے۔

شاہ خاور نے بی بی سی کو بتایا کہ درخواست گزار اکبر ایس بابر کی طرف سے ایک درخواست سکرونٹی کمیٹی میں دی گئی تھی جس میں وزیر اعظم عمران خان کے جنوبی وزیرستان میں حالیہ خطاب کو بنیاد بنایا گیا تھا۔
اس بیان میں وزیر اعظم عمران خان نے کہا تھا کہ ان کی جماعت کو بیرون ممالک سے جتنے بھی فنڈز ملے ہیں ان کے شواہد ان کی جماعت کے پاس موجود ہیں لہذا وہ اس سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی کو اوپن کرنے کو تیار ہیں۔

اُنھوں نے کہا کہہ اس درخواست کے حوالے سے جو جواب جمع کروایا گیا ہے اس میں کہا گیا ہے کہ چونکہ الیکشن کمیشن 21 جنوری کو ایک وضاحتی بیان جاری کر چکا ہے کہ سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی ان کیمرہ ہی ہوگی تاہم جب سکروٹنی کمیٹی اس معاملے میں اپنی سفارشات الیکشن کمیشن کے حکام کو بھجوائے گی تو ان سفارشات کی روشنی میں الیکشن کمیشن میں ہونے والی کارروائی اوپن کورٹ میں ہو گی۔

شاہ خاور کا کہنا تھا جب الیکشن کمیشن پہلے ہی اس بات پر فیصلہ دے چکا ہے تو پھر سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی کو کیسے پبلک کیا جا سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں