صحيح البخاري 0

صحیح بخاری ۔ جلد سوم ۔ تقدیر کا بیان ۔ حدیث 1543

58 / 100

صحیح بخاری ۔ جلد سوم ۔ تقدیر کا بیان ۔ حدیث 1543
للہ تعالیٰ کا قول کہ اللہ کا حکم ایک قدر معین کے ساتھ ہے

راوی: موسیٰ بن مسعود , سفیان , اعمش , ابووائل , حذیفہ

حَدَّثَنَا مُوسَی بْنُ مَسْعُودٍ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ عَنْ الْأَعْمَشِ عَنْ أَبِي وَائِلٍ عَنْ حُذَيْفَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ لَقَدْ خَطَبَنَا النَّبِيُّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ خُطْبَةً مَا تَرَکَ فِيهَا شَيْئًا إِلَی قِيَامِ السَّاعَةِ إِلَّا ذَکَرَهُ عَلِمَهُ مَنْ عَلِمَهُ وَجَهِلَهُ مَنْ جَهِلَهُ إِنْ کُنْتُ لَأَرَی الشَّيْئَ قَدْ نَسِيتُ فَأَعْرِفُ مَا يَعْرِفُ الرَّجُلُ إِذَا غَابَ عَنْهُ فَرَآهُ فَعَرَفَهُ

موسی بن مسعود، سفیان، اعمش، ابووائل، حذیفہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت کرتے ہیں انہوں نے بیان کیا کہ نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ہم لوگوں کے سامنے خطبہ دیا تو قیامت تک ہونے والی کوئی بات نہیں چھوڑی، جس کو یاد رکھنا تھا، اس نے یاد رکھا اور جس کو بھولنا تھا وہ بھول گیا اگر میں کوئی ایسی چیز دیکھ لیتا ہوں جس کو میں بھول گیا ہوتا ہوں تو میں اسے ایسے پہچانتا ہوں جس طرح کہ ایک شخص (کسی کو) پہچانتا ہے، جب وہ غائب ہوجاتا ہے پھر اس کو جب دیکھتا ہے تو پہچان لیتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں