تمہاری پیاس کب بجھے گی؟ نیوزی لینڈ میں مساجد پر دہشتگردی: ذمہ دار کون؟ 7 345

تمہاری پیاس کب بجھے گی؟ نیوزی لینڈ میں مساجد پر دہشتگردی: ذمہ دار کون؟

تمہاری پیاس کب بجھے گی؟؟

مفتی گلزار احمد نعیمی

آج نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو جامع مساجد النور اور لن ووڈ میں نماز جمعہ کے لیے تشریف لانے والے مسلمانوں کو ایک آسٹریلوی سفید فام دہشت گرد نے گولیوں سے بھون ڈالا.اس دہشت گرد کے حملہ کے نتیجے میں 50 سے زائد بےگناہ مسلمان شھید اور بیس سے زائد شدید زخمی ہوئے.حملہ میں چار افراد شریک تھے جن میں ایک عورت بھی بتائی جارہی ہے.ان سب کو حراست میں لیا جاچکا ہے.نیوزی لینڈ کے وزیراعظم جاسنڈاآرڈن نے اس دن کو ملکی تاریخ کا سیاہ دن قرار دیا ہے.کرائسٹ چرچ کے میئر لیئین ڈلریل نے کہا ہے کہ ہمارا شہر ہمیشہ کے لیے بدل چکا ہے.
نیوزی لینڈ ایک ایسا ملک ہے جہاں مسلم آبادی بہت کم ہے.سرکاری اعداد و شمار کے مطابق نیوزی لینڈ میں مسلمان کل آبادی کاصرف ایک اشاریہ ایک فیصد(1.1)ہیں.2013 کی مردم شماری کے مطابق یہاں مسلمانوں کی تعداد46000 ہزار ہے.جبکہ 2006 کی مردم شماری کے مطابق 36000 ہزار تھی.یہاں مسلمان آبادی میں تیزی اضافہ ہورہا ہے.مشرق اور مغرب کے غیر مسلم ممالک اس بات سے شدید خائف ہیں کہ ان کے ممالک میں مسلم آبادی کی یہ تیز رفتاری آنے والے وقتوں میں انہیں ان ممالک کی زمام اقتدار تک پہنچا دے گی.اس خوف کے مارے یہ لوگ آئے دن مسلمانوں کے خلاف کوئی نہ کوئی سانحہ تخلیق کرتے رہتے ہیں تاکہ مسلمان مستقلا دہشت زدہ رہیں.
آج پوری غیر اسلامی دنیا الكفر ملة واحدة کا مکمل نقشہ پیش کرہی ہے وہ مسلمانوں کے مقابلے میں متحد ہے.اس نے مسلمان کو دہشگرد کہا ہے اور اس کے نزدیک مسلمان ہی اس روئے زمین کا سب سے بڑا دہشتگرد ہے.آج اس آسٹریلوی بدبخت دہشگرد کو مغربی میڈیا شوٹر کہہ رہا یا انتہاپسند.وہ اسے دہشت گرد کہنے کے لیے تیار نہیں ہے.ان کی ڈکشنری میں دہشتگردکا لفظ صرف مسلمان کے لیے وضع کیا گیا ہے.یعنی مغرب کے نزدیگ صرف مسلمان دہشت گرد ہے عیسائی,یہودی ہندو الغرض کوئی بھی غیر مسلم دہشگرد نہیں ہوسکتا.اگر پاکستان یا ایران کشمیری اور فلسطینی مظلوموں کا ساتھ دیں تو مغرب کے نزدیک یہ ممالک دہشت گردوں کا ساتھ دے رہے ہیں.اگر بھارت اور اسرائیل مظلوموں کے جسم گولیوں سے چھلنی کردیں تو اس کے باوجود وہ دہشت گرد ریاستیں قرار نہیں پائیں گی.اس لیے کہ وہ مسلمانوں کو مار رہی ہیں کونسا وہ عیسائیوں یا یہودیوں پر گولیاں برسا رہے ہیں .اگر وہ یہودیوں اور عیسائیوں پر گولیاں چلاتے تو وہ دہشت گرد ریاستیں قرار پاتے.
میرااسلام دشمن قوتوں سے یہ سوال ہے کہ آخر کب تک تم مسلمانوں کا خون پیتے رہو گے اور تمہاری کب پیاس بجھے گی؟؟؟کب تمہاری آنکھیں ان مظلوموں کو انسان دیکھیں گی؟؟.تم نے القاعدہ ایجاد کی, ہزاروں مسلمانوں کا خون تم نے پیا تمہاری پیاس نہ بجھی.تم نے طالبان ایجاد کیے جہنوں نے ہمارے پاکیزہ سروں کو تن سے جدا کر کے ان کے ساتھ فٹ بال کھیلا.انسانی حقوق کا راگ الاپنے والوں ..!!!انسانیت کی یہ تذلیل تمہاری سرپرستی میں ہوئی ہے.تم نے افغانستان میں معصوم انسانوں کا خون پیا تمہاری پیاس نہ بجھی.تم نے اپنے داعشی درندوں کو عراق کے شہروں فلوجہ ,سامرہ اور اوردیگر علاقوں میں کھلی چھٹی دے رکھی تھی.وہ ہمارے پاکیزہ سروں کو تن سے جدا کر کے نمبو کی طرح پانی کے ڈرموں میں نچوڑ کر شربت بنا کر پیتے رہے ہیں,تمہاری اور تمہارے درندوں کی پیاس پھر بھی نہیں بجھی.آخر تمہاری پیاس کب بجھے گی???.یاد رکھو.!!! ظلم کی ایک حد ہوتی ہے.اللہ اپنے بندوں کو یوں آگ اور خون میں غلطاں نہیں دیکھ سکتا.وہ تم سے ضرور بدلہ لے گا.آج نہیں توکل وہ ضرور تمہیں تمہارے انجام بد سے دوچار کرے گا.
تم کبھی ہندووں سے ہمیں نشانہ بنواتے ہو,کبھی عیسائی تمہیں کرائے کے قاتل مل جاتے اور کبھی بدھش تمہاری پیاس بجھانے کے لیے مسلمانوں کا خون تمہیں پیش کرتے ہیں.مجھے آج بھی یاد ہے جب برمی مسلمانوں کو جانوروں کی طرح ذبح کیا جاتا تھا اور انکی بوٹیاں دیگوں میں ڈال کر تمہارے قصائی پکاتے تھے.میں یا کوئی بھی مسلمان اس منظر کو کبھی بھی نہیں بھول سکتا.تمہیں ایک نہ ایک دن اس سب کا حساب دینا پڑے گا.
تمہیں ذرا بھی خوف خدا نہ ہوا تم نے اس حملہ کے نتیجے میں نیوزی لینڈ کی تمام مساجد کو مقفل کردیا.کیا تمہارے نزدیک مسئلہ کا یہ حل ہے?.ہم نیوزی لینڈ کی حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں.کہ مساجد کوفل فور کھولا جائے اور وہاں کی مسلم اقلیت کے جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنایاجائے.

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں